برطانیہ،یورپ ،امریکہ اورخلیجی مارکیٹ میں پاکستانی چاول کی طلب میں ریکارڈ اضافہ

ماضی کے مقابلے میں رواں برس مارکیٹ میں پاکستان کے باسمتی چاول کافی پسند کیے جا رہے ہیں۔
لندن:(ایکسپورٹ ایڈیٹر)ویسے تو پاکستان سے متعلق اچھی سٹوری فایل کرنا خواب ہی رہتا ہے ۔ پاکستان کے لیے خوشخبری یہ ہے کہ برطانیہ،یورپ ،امریکہ اورخلیجی مارکیٹ میں پاکستانی چاول کی طلب میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے۔ماضی کے مقابلے میں رواں برس مارکیٹ میں پاکستان کے باسمتی چاول کافی پسند کیے جا رہے ہیں۔
سبق ویب سائٹ اور ڈان لندن (انگلش)کے مطابق گزشتہ 2 برسوں میں انڈین باستمی چاول کی برآمدات میں کمی کے باعث سعودی عرب سمیت خلیجی ممالک، عراق، یمن ،برطانیہ ،یورپ اور امریکہ کی منڈیوں میں پاکستانی باسمتی چاول کی طلب میں اضافہ ہوگیا ہے۔دوسری جانب انڈین حکومت کے اعداد وشمار کے مطابق انڈیا کو 2023 میں چاول کی برآمد سے 5.4 ارب ڈالر کا ریکارڈ منافع ہوا، تاہم پاکستانی چاول کی پیداوار میں اضافے اور کم قیمت پر دستیاب ہونے کی وجہ سے عالمی منڈیوں میں انڈین چاول کو چیلنجز کا سامنا ہے۔ انڈین جریدے ’دکن ہیرالڈ‘ کے حوالے سے کہا ہے کہ انڈین چاول کی برآمدات میں کمی رواں سال بھی جاری رہے گی جبکہ پاکستانی چاول کی پیداوار اور برآمدات میں اضافہ کے باعث انڈین چاول کو سخت مسابقت کا سامنا ہوگا۔
انڈیا نے گزشتہ سال 4.9 ملین ٹن چاول برآمد کیے جو کہ 2020 کے مقابلے میں 5 ملین ٹن سے کم ہے۔پاکستان اور انڈیا باسمتی چاول کے سب سے بڑے برآمد کنندگان ہیں۔ باسمتی چاول خلیجی ریاستوں سمیت دنیا کے کئی ممالک میں پسند کیے جاتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں