برطانوی فوج نے داڑھی پر سینکڑوں سال سے عائد پابندی ختم کر دی

برطانوی بادشاہ چارلس نے اس فیصلے پر دستخط کیے جس میں برطانوی فوج کے افسران اور سپاہیوں کو داڑھی رکھنے کی اجازت دی گئی ہے۔
سٹاف رپورٹر
لندن:برطانوی فوج نے اپنے اہلکاروں پر سینکڑوں سال سے عائد داڑھی رکھنے کی پابندی ختم کر دی۔ برطانوی بادشاہ چارلس نے اس فیصلے پر دستخط کیے جس میں برطانوی فوج کے افسران اور سپاہیوں کو داڑھی رکھنے کی اجازت دی گئی ہے۔ شاہ چارلس برطانوی افواج کے کمانڈر انچیف بھی ہیں۔برطانوی فوج میں 100 سال بعد اب ایک ایسی پابندی کو ختم کر دیا گیا ہے، جس کے باعث کئی فوجی سکھ کا سانس لے سکیں گے۔
برطانوی فوجی جوان اور افسران اب باقاعدہ اپنی داڑھی رکھ سکیں گے اور اسے بڑھا بھی سکیں گے، برطانوی فوج میں 100 سال سے زائد عرصے سے لگی پابندی کا خاتمہ کر دیا گیا ہے۔
برطانوی فوج کے سربراہ جنرل سر پیٹرک سینڈرز نے فوج کے ظاہری حلیے میں اس تبدیلی کا فیصلہ حاضر سروس اور ریٹائر فوجیوں سے کیے گئے ایک سروے کے بعد کیا۔ سر پیٹرک کا کہنا ہے کہ یہ تبدیلی فوری طور پر لاگو ہو جائے گی۔یہ فیصلہ ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب برطانوی وزیر دفاع گرانٹ شاپس نے فوج میں بھرتیوں کے بحران پر بات کرتے ہوئے داڑھی پر پابندی کو ’مضحکہ خیز‘ قرار دیا تھا۔
برطانوی فوج سے قبل برطانوی شاہی بحریہ اور فضائیہ اس پابندی کو ختم کر چکی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں